ملتان: ملتان سلطانز والے وسیب کی شناخت کو مسخ نہ کریں اور جنوب کی بجائے وسیب کا پورا نام لیں ۔ ان خیالات کا اظہار سرائیکستان قومی کونسل کے صدر ظہور دھریجہ نے بہاؤ الدین زکریا یونیورسٹی میں منعقد کئے گئے سرائیکی کلچرل شو میں طلباء سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ ملتان سلطانز نے عطا اللہ خان کی آواز میں ملتان سلطان کا گیت آن ایئر کرایا ہے جس میں سرائیکی وسیب کو جنوب کا نام دیا گیا ہے جو کہ خطے میں بسنے والے تمام لوگوں کی توہین ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پشاور زلمی والے پشتو سے بات شروع کرتے ہیں اور پشتو پر ختم کرتے ہیں ، نہ جانے ملتان سلطان والوں کو کیا احساس کمتری ہے کہ وہ اپنے وسیب کا نام لینے سے بھی شرماتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ علی جہانگیر ترین کا سوشل میڈیا پر یہ جواز دینا غلط ہے کہ ہم خطے کو جنوب اس لئے کہتے ہیں کہ یہاں سرائیکی کےعلاوہ دوسری زبانیں بولنے والے بھی رہتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ کیا دوسرے صوبوں میں دیگر زبانیں بولنے والے نہیں رہتے ؟ ظہور دھریجہ نے کہا کہ آج سرائیکی کلچرل شو میں پنجابی ‘ اردو بولنے والے بھی سرائیکی جھمر میں شریک ہیں تو وہ اپنے خطے کی شناخت کے ساتھ جڑے ہوئے ہیں ‘ جبکہ احساس کمتری کا شکار عاقبت نا اندیش بعض لوگ عجیب و غریب جواز پیش کر کے وسیب کے کروڑوں افراد کی دل آزاری کا باعث بنتے ہیں ، حالانکہ خطے کی شناخت خطے میں بسنے والے تمام لوگوں کی ضرورت ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ملتان سلطانز سے لفظ جنوب ختم کرکے وسیب شامل نہ کیا گیا تو پورے وسیب میں احتجاج کریں گے۔