شانگلہ الپوری ( رضاشاہ سے )پاکستان مسلم لیگ ( ن) کے حلقہ این ۔اے ۔دس شانگلہ ون کے ایم ۔این۔اے ڈاکٹر عباد اللہ نے کہا ہے کہ شانگلہ جو نہایت پسماندہ ضلع ہے اور اس میں اب بھی بہت کچھ کرنا باقی ہے اس وقت جتنے بھی میگاہ پراجیکٹ ہوے ہیں تو یہ پاکستان مسلم لیگ (ن) کے دورےحکومت کے ہیں اور اب بھی ہماری یہ کو شش ہوگی کے ہم مزید شانگلہ میں ترقیاتی منصوبوں کا جال بیچھایں تاکہ شانگلہ کے عوام کی محرومیوں کا ازالا کیا جا سکیں شانگلہ کے عوام کے میں نہایت مشکور اور معنون ہوں کے انھوں نے ایک پھر سے ہم اپنے اعتماد کا اظہار کر کے دوبارہ بھاری اکثریت سے کامیاب کرا کر اپنے خدمت کا موقعہ دیا جس پر میں شانگلہ کے عوام کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں اور وعدہ کرتا ہوں کے میں بھی اپنے فرایض منصبی میں کسی قسم کی کوتاہی اور شانگلہ کے عوام کو کسی قسم کی شکایت کا موقعہ نہیں دونگایہ باتیں انھوں نے گزشتہ روز الپوری میں اپنے رہایش گاہ میں مقامی میڈایا کے نمایندوں کے ساتھ ایک خصوصی گفتگو کے دوران بتای موصوف نے مزید وضاحت کرتے ہوے کہا کے ہم نے اپنے دورے اقتدار میں شانگلہ کے عوام کیلے بہت کچھ کیا ہے جس میں مختلف گریڈ سٹشن ۔یوینورسٹی اف سوات کے کیمپس کا قیام کے علاوہ تین گرلز ڈیگری کالجز رابطہ سڑکیں اور شانگلہ کے عوام کی فلاح بہبود کیلے جو اقداماٹھاے ہیں وہ کسی سے پو شیدہ نہیں ہم اقتدار میں ہویا نہ ہو شانگلہ کے عوام کیلے ہمارے خدمات ہر وقت حاضر ہیے ہم نے ہمیشہ اصولی سیاست کی ہے اور ایندہ بھی کرینگے ایک سوال کے جواب میں انھوں نے کہا کہ کام کے ادمی کو ہر ایک پیشکش کرتا ہے ہو سکتا ہے کہ انجینر امیر مقام کو بھی ہوا ہو لیکن مجھے اس بارے میں کولی علم نہیں ہماری جماعت انتہای مشکل حاالت سے گز رہی تھی ہم اپنے قیادت کے شانہ بشانہ کھڑے تھے اور ایندہ بھی کھڑے رہنگے پختون قیادت کو جان بوجھکر اسمبلی سے دور رکھا گیا ہے جس کے حالت اپ لوگوں کے سامنے ہیں کہ اس وقت ملک میں کیا ہو رہا ہے ابھی تک موجودہ حکومت نے اپنے لیے کوی گول منتخب نہیں کیا ہے بس دیکھتے ہیں کتنی دیر تک چلتی ہے اور تبدیلی کے نام پر عوام کیا دیتی ہے ۔