جکارتہ(بی بی سی اردو ڈاٹ ٹی وی) انڈونیشیاءکے جزیرے سماترا پر پولیس نے ہوٹل سے 6جوڑوں کو گرفتار کرکے سرعام کوڑوں کی سزا دے ڈالی۔ میل آن لائن کے مطابق ان جوڑوں کو سماترا کے صوبے اسیہہ کے شہر بیندا اسیہہ کے ایک ہوٹل پر کئی ماہ قبل مارے گئے چھاپے کے دوران حراست میں لیا اور عدالت میں پیش کیا گیا تھا، جہاں سے انہیں 8،8مہینے قید اور 17سے 25کوڑوں کی سزا سنائی گئی۔ ان 6مردوں اور 6خواتین کی گزشتہ روز قید کی سزا پوری ہوئی جس پر انہیں جیل سے نکال کر ایک چوراہے میں لایا گیا اور وہاں لوگوں کے سامنے کوڑے مارے گئے۔کوڑے کھانے سے 2لڑکیوں کی حالت غیر ہو گئی اور خواتین پولیس آفیسرز کو انہیں وہاں سے اٹھا کرلیجانا پڑ گیا۔ واضح رہے کہ انڈونیشیاءکا صوبہ اسیہہ واحد صوبہ ہے جہاں اسلامی شرعی قوانین نافذ ہیں، جن کے تحت مردوخواتین کا اختلاط غیرقانونی ہے اور اس کے مرتکب ہونے والے مردوخواتین کو قید اور کوڑوں کی سزا دی جاتی ہے۔گزشتہ سال دسمبر میں 2نوجوان ایک کم عمر لڑکی کے ساتھ جنسی تعلق استوار کرتے رنگے ہاتھوں پکڑے گئے تھے جس پر انہیں 100، 100کوڑے مارے گئے تھے۔