ملتان: جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن کا کہنا ہے کہ اقتصادی لحاظ سے ملک دیوالیہ ہو چکا ہے۔ نواز شریف کو معالج کی سہولت نہ دینا حکومتی انتقام ہے۔ملتان میں مدرسہ قاسم العلوم میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ ملک کو نظریاتی طور پر تقسیم کیا جارہا ہے۔ ناموس رسالت کے حوالے سے حکومتی ایوانوں سے غلط باتیں سامنے آ رہی ہیں۔ آج ملک میں اسرائیل کو تسلیم کرنے کی باتیں ہو رہی ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ اقتصادی لحاظ سے ملک دیوالیہ ہو چکا ہے جبکہ عورت کے دن کے نام پر جس تہذیب کا مظاہرہ کیا گیا اس کی مذمت کرتا ہوں، ملک میں ہندوستانی کلچر کو فروغ مل رہا ہے۔ آج ملک میں اسرائیل کو تسلیم کرنے کی باتیں ہو رہی ہیں۔ان کا مزید کہنا تھا کہ اپوزیشن جماعتیں رابطے میں ہیں اور انھیں عوام کی حمایت حاصل ہے۔مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ حالیہ کشیدگی میں بھارت کو شکست ہوئی، مودی الیکشن جیتنے کیلئے پوائنٹ سکورننگ کر رہا ہے۔ بھارتی پائلٹ کو ضمانت لے کر رہا کرنا چاہیے تھا۔ نواز شریف یا زرداری پائلٹ کو رہا کرتے تو مودی سے یاری کے الزام لگتے۔ مولانا فضل الرحمن کا کہنا تھا کہ نواز شریف کے ساتھ ظلم ہو رہا ہے، ان کو معالج تک رسائی نہ دینا حکومتی انتقام ہے۔انہوں نے کہا کہ مذہبی جماعتوں پر امریکا اور انڈیا کی ایما پر پابندیاں لگیں، جعلی الیکشن سے آنے والے قوم کی نمائندگی کا حق نہیں رکھتے۔ امریکہ اور طالبان کے مابین مذاکرات اچھی بات ہے۔ امریکہ نے جن لوگوں پر بمباری کی آج انہیں سے مذاکرات کر رہا ہے۔