کراچی: وزیرریلوے شیخ رشید احمد نے کہا ہے کہ ہم بہت سارے بحرانوں میں پھنسے ہیں ، حقیقت میں آئی ایم ایف کی شرائط بہت سخت ہوں گی، مگر میں پہلے بھی کہہ چکا ہوں کہ آئی ایم ایف سے مدد لینے کے سوا کوئی دوسرا راستہ نہیں، سیاسی استحکام کے بغیر معاشی استحکام ممکن نہیں، یہاں جس کو کرپشن پر پکڑو وہ بیمار ہوجاتا ہے ،عمران خان کو مشورہ دیا ہے کہ انہیں جانے دو، زیر حراست کسی کی جان چلی گئی تو ہمارے گلے پڑ جائے گا،ملک کو بے دردی سے لوٹا گیا ، معاشرہ کرپٹ ہوچکا، سیاستدانوں کو بدعنوانی کا راستہ کاروباری لوگ دکھاتے ہیں ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ہفتے کو کراچی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے دورے کے موقع پر اجلاس سے خطاب میں کیا۔بزنس مین گروپ کے چیئرمین سراج قاسم تیلی، وائس چیئرمین زبیر موتی والا ، انجم نثار، اے کیو خلیل، جنید اسماعیل ماکڈا، خرم شہزاد، آصف شیخ جاوید، ایم این اے آفتاب جہانگیر ،سی ای او پاکستان ریلویز آفتاب اکبر و دیگر اجلاس میں موجود تھے ۔ شیخ رشید نے کراچی سرکلر ریلوے کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ جیسے ہی سندھ حکومت معاہدے پر دستخط کرے گی اور ڈیزائن کی منظوری دیگی،ریلوے تجاوزات کاخاتمہ کرکے زمین کا انتظام سندھ حکومت کے حوالے کردیگا، اگر ہماری مدت اقتدار میں کے سی آر مکمل نہیں ہوا تو پھر کبھی مکمل نہیں ہوپائے گا۔ سراج قاسم تیلی نے وفاقی وزیر سے درخواست کی کہ وہ وزیراعظم عمران خان سے کہیں کہ کے سی سی آئی کے دورے کے موقع پر تاجربرادری سے کیے گئے اپنے وعدے پورے کریں،ابھی تک ایف بی آر، نیب اور ایف آئی اے میں کوئی بڑی تبدیلی نظر نہیں آئی ہے ،انہوں نے مزید کہا کہ پرانی ایمنسٹی سکیم بہتر تھی لیکن اعتماد کے فقدان کی وجہ سے آنے والی ایمنسٹی اسکیم ناکام ہوجائے گی ،کیونکہ جنہوں نے پچھلی ایمنسٹی سکیم سے فائدہ اٹھایا ان کا پیچھا مسلسل جاری ہے ۔ ادھرایکسپو سینٹر کراچی میں آٹو شو کے دورے کے دوران صحافیوں سے گفتگو میں شیخ رشید کاکہناتھاکہ ریلوے کی زندگی میں انقلاب کا فیصلہ 27اپریل کو ایم ایل ون معاہدے پر دستخط کی صورت میں ہوگا،چاہ بہار بندرگاہ پر دو جہاز کھڑے ہوسکتے ہیں جبکہ گوادر پرایک سو اسی جہاز کھڑے ہوسکتے ہیں،بیروزگاری کے خاتمے کے لیے آٹو انڈسٹری کو ترقی دینا ہوگی، اگلے 5 سے 10 سال میں پاکستان معیشت میں تاریخ رقم کرے گا۔ آئی ایم ایف کی شرائط سخت لیکن پروگرام میں جانا ضروری ، ملک کو بے دردی سے لوٹا گیا ، معاشرہ کرپٹ ہوچکا، سیاستدانوں کو بدعنوانی کا راستہ کاروباری لوگ دکھاتے ہیں سیاسی استحکام کے بغیر معاشی استحکام ممکن نہیں، کے سی سی آئی میں اجلاس سے خطاب ،بیروزگاری کے خاتمے کیلئے آٹو انڈسٹری کو ترقی دیناہوگی، ایکسپو سینٹر میں گفتگو