شانگلہ الپوری (رضاشاہ سے) یو۔ سی ۔ڈھری کے عوامی سماجی حلقوں نے اس بات پر سخت افسوس کا اظہار کرتے ہوے کہا ہے موجودہ صوبالی حکومت خیبر پختون خواہ
تو بلند اور بھانک دعوے تو کرتی ہے تبدیلی کی لیکن اس وقت ضلع کے یو ۔سی ڈھری میں سکول کے بچوں کا یہ حال ہے کہ انکو گزشتہ کہی سالوں سے زیور تعم کو حاصل کرنے کیلے سر چپانے کی جگہ تک میسر نہیں ہے جبکہ مذکورہ گورنمنٹ گرلزہالی سکول میں سٹاف کی اشد کمی کی وجہ سے سکول کی طلبات بھی سحی طریقے سے تعلیم حاصل کرنے سے قاصر ہیں کیونکہ سکول کی طلیبات زیور تعلیم کو حاصل کرنے کیلے روزانہ پانچ سے چھ کیلو میٹر پیدل چل کر سکول اتے ہیں لیکن اس کے باوجود سٹاف نہ ہونے کی وجہ سے ان کو مایوس ہون پڑتا ہے پی۔ٹی ۔ای کے سر گرم رکن محمد سبحان نے وضا حت کرتے ہوے کہا کے یہ کونسی تبدیلی کے اس دور جدید میں بھی شانگلہ کے عوام اپنی جایز حقوق سے اب بھی محروم ہیں انھوں نے کہا کے شانگلہ کے عوام نے پی۔ٹی۔ای کو اس لیے اوٹ نہیں دیا تھا کے اقتدار میں اکر شانگلہ کے کی محرومیوں مزید اضافہ ہوگا بلکہ اس لیے اوٹ دیا تھا کے تبدیلی ایگی تو یہ تبدیلی شانگلہ میں کب ایگی جس کی شانگلہ کے مکین شددت سے انتظار کر رہے ہیں انھوں نے صوابلہ قاعدین سے اپیل کرتیہوے کہا کے خدارہ شانگلہ کے عوام پر راحم کرے تاکہ مزید شانگلہ کے نوجوان کویٹہ اور حیدراباد کے کانوں میں اپنی زندگی بازی ہارنے کی بجاے اپنے بے بہ عزت طور پر دو وقت کی روٹی کما سکیں جو شانگلہ کی عوام کی بنیادی حق جو انکو ملنی چاھیے