لاہور : پچھلے کچھ عرصہ میں غیر ملکی خواتین دھڑا دھڑ پاکستان آ کر نوجوان لڑکوں سے شادیاں رچا رہی ہیں اور دوسری جانب چینی نوجوان لڑکے بھی پاکستانی لڑکیوں کے ساتھ نکاح کر رہے ہیں جس کے چرچے سوشل میڈیا سمیت ٹی وی چینلز پر بھی بھر پور ہوتے رہے تاہم چینی لڑکوں کے حوالے سے میڈیا میں کچھ نا خوشگوار خبریں بھی آئیں جسے سن کر شائد ہر کوئی ہی کانپ اٹھے لیکن اب شادی کرنے کے بعد چین منتقل ہونے والی کچھ نوجوان پاکستانی لڑکیوں نے زبردست پیغام جاری کر دیاہے ۔ تفصیلات کے مطابق ٹویٹ صارف عارف قریشی نے مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ پر اپنا تعارف صحافی سے کروایا ہے تاہم انہوں نے ایک ویڈیو شیئر کی ہے جس میں پاکستان سے شادی کر کے چین جانے والی چند لڑکیوں کا خصوصی انٹرویو کیا گیاہے ۔ ویڈیو میں نوجوان پاکستانی لڑکیاں اپنے سسرال کیا تعریفیں کرتی ہوئی دکھائی دیتی ہیں ۔ ویڈیو میں ایک شخص سامنے کھڑی لڑکیوں سے اپنے سسرال کے بارے میں بتانے کیلئے درخواست کرتاہے کہ وہ ان کے ساتھ یہاں پر کیسا سلوک کر رہے ہیں ؟ جس پر ایک لڑکی گفتگو کرتے ہوئے بتاتی ہے کہ ” میں سو رہی ہوتی ہوں تو میری ساس میرے پاﺅں ، سر اور ہاتھ چومتی ہے جبکہ وہ مجھے اپنے ہاتھوں سے دودھ بھی پلاتی ہے ۔“ دوسری لڑکی اپنے بارے میں بتاتی ہوئی کہتی ہے کہ یہاں پر میری بھابھی تو میرے کمرے کی صفائی بھی کر کے جاتی ہے اور میرے لیے کھانا لانے کے علاوہ برتن بھی خود لے کر جاتی ہے ۔یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ پاکستانی میڈیا میں چند دن قبل کچھ خبریں گردش کر رہی تھیں کہ چینی لڑکے دھوکے بازی کے ساتھ پاکستانی لڑکیوں سے شادی کرتے ہیں اور پھر وہ انہیں چین لے جا کر ان کے اعضاءفروخت کر رہے ہیں اور ان سے جسم فروشی بھی کروا رہے ہیں ۔یہ خبریں نشر ہوئیں تو چینی سفارتخانے کی جانب سے سخت ایکشن لیا گیا اور فوری کارروائی عمل میں لانے کا اعلان کیا گیا جس کا پاکستان کی جانب سے خیر مقدم کیا گیا ۔صحافی عارف قریشی کی جانب سے ٹویٹر پرویڈیو شیئر کرتے ہوئے پیغام درج کیا گیا کہ ” جو لڑکیاں چینی لڑکوں کے ساتھ شادی کر کے چین گئی ہیں ان کی جانب سے میڈیا پر چلنے والی ایسی تمام خبروں کی تردید کی گئی ہے بلکہ انہوں نے کہا کہ وہ اپنے شوہروں کے ساتھ انتہائی عزت دار زندگی گزار رہی ہیں اور بہت خوش ہیں ۔